ہلدی کے فوائد 0

ہلدی Turmeric

ہلدی Turmeric

عربی عروق الصفر
فار سی زرد چوب
سندھی ہیڈ
انگریزی Turmeric

اس کا رنگ زرد اور ذائقہ تلخ ہو تا ہے۔ اس کا مزاج گرم اور خشک ہے۔ اس کی مقدار خوراک ایک ماشہ سے تین ما شہ تک ہے۔ اس کے درج ذیل فوائد ہیں۔
(1) آنکھوں کی بینائی کی تیز کر تی ہے اور آنکھوں کی جملہ بیماریوں میں مفید ہے۔
(2 ) ہلدی کو دانت درد کے لیے متاثرہ دانت پر رکھ کر چبانا فائدہ مند ہے۔
(3 )گہرے سے گہرے زخم پر ہلدی کو ہمراہ پانی پتھر پر گھس کر لگانے سے ٹھیک ہو جا تا ہے۔
(4 ) بر ص ( پھلبہری ) کو دور کرنے کے لیے ہلدی کو باریک کرے صبح و شام چار ماشہ سفوف ہلدی ہمراہ پانی کھلائیں اور دن میں دو تین بار ہلدی پتھر پر پانی کے ساتھ گھس کر داغوں پر لگانے سے بہت جلد بر ص دور ہو جاتی ہے۔
(5 ) جگر کا سدہ کھو لتی ہے۔
(6) ورموں کو تحلیل کر تی ہے اور تسکین دیتی ہے۔ ایسی صورت میں ہلدی پانی میں رگڑ کر لیپ کر تے ہیں۔
(7 ) پرانا ناسور بھی ہلدی تین ماشہ دن میں دو تین مر تبہ گھس کر لگانے سے ٹھیک ہو جا تا ہے۔
(8) خار ش کو دور کرنے کے لیے پانچ تولہ ہلدی تقریباً چار کلو پانی میں جو ش دیں۔ پانی جب ایک کلو رہ جائے تو اسے چھان کر بو تل میں بند کر لیں۔ رات کے وقت متاثرہ جگہوں پر وہ پانی لگائیں اور صبح نہا لیں۔ دو تین روز میں افاقہ ہو گا۔
(9) ہلد ی کو بطور ابٹن بھی استعمال کیا جاتا ہے ، اس سے جلد صاف اور نرم ہو جا تی ہے۔
(10) پرانا سوزاک دور کرنے کے لیے چھ چھ ما شہ ہلدی صبح و شام ہمراہ پانی کھلا نا بے حد مفید ہے۔
(11) ہلد ی کو پانی کے ساتھ پتھر پرگھس کر رات کو سوتے وقت لگانے سے چنبل دور ہو جا تا ہے۔
(12) یرقان میں صبح و شام تین تین ما شہ ہلدی ہمراہ پانی یا عرق مکو کھلانا مفید ہے۔
(13)جریان میں بھی ایک ماشہ ہلدی صبح و شام پانی یا دو دھ کے ساتھ لینا انتہائی مفید ہے۔
(14) ہلد ی کو گھس کر بواسیر کے مسوں پر لگانے سے جلن یا کھجلی وغیرہ دور ہو جا تی ہے۔
(15) سانپ کے ڈسنے کی صورت میں مریض کو پانچ تولہ ہلدی آدھ پاؤ گرم دودھ میں رگڑ کر تھوڑی تھوڑی دیر بعد پلانے سے مریض جانی خطرے سے محفوظ ہو جا تا ہے۔ اس دوران اسے فوری طور پر ہسپتال آسانی سے لے جایا جا سکتا ہے ، لیکن نسخہ ہر دس پندرہ منٹ بعد مریض کو دیتے رہیں۔ اگر ہسپتال نہ جا یا جا سکے تو زہر کے دور ہو نے تک مقدار خوراک پانچ تولہ ہی رکھیں ، بعد میں پندرہ دن تک تین تین ما شہ ہلدی دودھ کے ساتھ صبح و شام کھلاتے رہیں اور ڈسی ہوئی جگہ پر ہلدی کا لیپ بھی کریں۔
(16) باؤلے کتے کے کا ٹنے پر مریض کو ایک تولہ ہلدی پانی کے ساتھ دن میں دو بار کھلا نا مفید ہوتا ہے اور کاٹی ہو ئی جگہ پر ہلدی کا لیپ کر نا بھی ضروری ہے۔ اس سے زخم جلدی بھر جاتا ہے۔
(17) چوٹ لگنے یا مو چ آنے کی صورت میں ہلدی اور چونا ہم وزن رگڑ کر لیپ کر نا مفید ہے۔
(18) زکام اور نزلہ میں ہلدی کو دہکتے ہوئے کوئلوں پر ڈال کر دھونی لینا مفید ہوتا ہے۔ نزلہ کی شدت فوری طور پر کم ہو جاتی ہے ، مگر یہ دھونی شام کو لینی چاہئے اور دھونی لینے کے بعد دو تین گھنٹے تک کچھ نہیں کھا نا چاہئے۔
(19) چہرے کے داغ دھبوں کو دور کرنے کے لیے ہلدی میں سرسوں کا تیل ملا کر چہرے پر لگانے سے چہرے کا رنگ نکھر آتا ہے اور داغ دھبے دور ہو جا تے ہیں۔
(20) ہلدی کو بھون کر سونٹھ اور چینی ملا کر کھا نے سے جوڑوں کا درد دور ہو جا تا ہے۔
(21) ہلد ی خون صاف کر تی ہے ، ایک ما شہ ہمراہ پانی دس دن تک استعمال کرنا مفید ہے۔
(22) بلغم کو دور کر تی ہے ، جگر اور سینے کو صاف کر تی ہے۔
٭٭٭
ہومیوپیتھک دواوں اور نسخہ جات طریقہ استعمال

اپنا تبصرہ بھیجیں