الرجی 0

الرجی اور ھومیو علاج

الرجی اور ھومیو علاج

الرجی  کی تعریف۔تاریخ۔وجوہات۔ علامات اور الرجی کا ھومیوپیتھک سے پرمنینٹ علاج

نوٹ: یہ پوری دنیا میں پہلی اور منفرد رپورٹ ہے جو میرے 20 سالہ مطالعہ۔تحقیق اور ھومیو پیتھک کے تجربات پر مشتمل ھے۔لیکن اس سے فائدہ صرف وہی ڈاکٹر اٹھا سکیں گے جو اس کو شروع سے آخر تک پڑھیں گے

الرجی کی تاریخ۔

دنیا میں  الرجی کا سب سے پہلا زکر کلیمینس وان پرکٹ نے 1906 میں کیا لفظ الرجی۔ دو یونانی الفاظ( allos) یعنی other  اور دوسرا  (ergon)

جس کے معنی   work کے ہیں پوری دنیا میں ایسی تمام بیماریوں کو الرجی کا نام دیا گیا ہے جو زیادہ حساسیت کے طور پر بار بار پیدا ہوں چونکہ یہ ساری گڑ بڑھ امیون سسٹم میں خرابی سے پیدا ھوتی ہیں۔

یہ ٹوٹل چار اقسام کی ہیں۔ الرجی میں ایمیونوگلوبن۔ای ( E=IgE )  کا بہت عمل دخل ھے۔ اور بتانے والے کا نام۔کیمی شیج ہے۔ جنہوں نے 1960 میں یہ حقیقت ثابت کی تھی۔ پھر 1963 میں فلپ گیل اور روبن کومس نے سب کچھ تجربات سے ثابت کر دیا۔

الرجی سے ہمارے جسم میں ھوتا کیا ھے۔؟؟؟

الرجی سے ہمارے جسم میں الرجن(اس ذرہ کا نام ہے جو ہمارے جسم میں الرجی پیدہ کرتا ہے)  جسم اس کے خلاف انٹی باڈی بناتا ہے۔ اینٹی باڈی خون میں موجود سفید خلیات سے چپک جاتی ہے۔ اور دوبارہ جب جسم اس چیز سے متاثر ھوتا ہے تو الرجن انٹی باڈی سے جڑ جاتا ہے اور جسم میں موجود Meddiators (جسم میں موجود  طاقتور شفاعت کنند گان جنہں ہم قوت مدافیت بھی کہہ سکتے ہیں باہر نکال دیتا ہے۔جس سے الرجی کی علامات ظاہر ھونا شروع ہو جاتی ہیں۔ الرجن دراصل۔ پھول گھاس پھونس۔دھول۔دھواں۔پرندے کے پروں۔کیمیکل۔ خوراک۔اور میڈسن وغیرہ میں موجود ہوتے ہیں اور ہمارے جسم میں داخل ھو کر ہمیں الرجی میں مبتلا کر دیتے ہیں۔ ایک اور وجہ موروثی الرجی ہے۔ایک اندازے کے مطابق کل دنیا کا چوتھائی حصہ اس میں مبتلا ہی۔ ماں باپ میں سے کسی ایک کو الرجی ہو تو 50% اور اگر دونوں کو ہو تو 70% اولاد کو الرجی ہوتی ہے۔اس بیماری میں اینٹی باڈیز mest cell  سے چپک کر خون میں مختلف کیمیکز خارج کرتا ہے۔ جس سے الرجی کی علامات ظاہر ہونے لگتی ہیں۔

الرجی کی شدت کے لحاظ سے تین بڑی اقسام یا درجات ہیں۔

نمبر 1 ۔  Mild symptoms

جلد پر خارش سے نشان پڑنا

آنکھوں سے پانی یا خارش

ناک کی بندش۔

نمبر 2 ۔ Moderate symptoms

چھینکیں اور ناک کا بہنا

سانس لینے میں دقت

خارش

نمبر۔3۔  Saver or Dangerous Sympyoms

زہنی ابتری

اسہال

متلی اور قے

اینٹھن مروڑ اور پیٹ دردد

الرجی کی اقسام۔………..

نمبر 1۔  اینٹی باڈی الرجی۔

انسانی جسم میں اس کی مندرجہ زیل چار اقسام ہیں۔1gE.IgG.IgD.IgA  ان میں کچھ تو مختلف زرائع سے جسم میں داخل ہونے سے اور کچھ لوگ جو IgE موروثی ہوں ان میں الرجی کی علامات بہت زیادہ پیٹ بھر کر کھانے سے پیدہ ہونے لگتی ہیں ( اس بات سے اسلام  میں بھوک رکھ کر کھانے کا حکم  تمام مزاہب میں اسلام کی برتری ثابت کرتی ہے)

نمبر 2۔ سیلولر الرجی

یہ الرجی جسم میں حد سے زائد لمفوسائٹ پیدہ ہو جانے سے الرجی کی علامات پیدا ھو جاتی ہیں۔

الرجی پیدا کرنے والے اسباب۔۔۔۔

نمبر ۔ا۔ موروثی الرجی

نمبر۔2۔ ادویاتی الجی

نمبر 3۔پولن الرجی

نمبر۔4۔جانوروں سے الرجی

نمبر۔5۔ربڑ/لے ٹیکس الرجی

نمبر۔6 سورج سے الرجی

نمبر۔7۔غزائی الرجی۔

نمبر 8۔ کیڑے مکوڑوں کے ڈنگ سے الرجی۔

نمبر۔9۔کادمیٹکس سے الرجی۔

نمبر10۔مولڈ الرجی۔(فنگس کی قسم)

نمبر11۔ دھول۔مٹی سے الرجی

الرجی پیدہ کرنے والے زرائع

   اور ان کا ھومیو علاج (علامات کے مطابق)

نوٹ: الرجی  کے لیے تجویز کی گئی میڈیسن کو استعمال سے پہلے۔ میازم۔جنس۔عمر کے ساتھ ساتھ موڈیلیٹیز۔ زہنی اور باقی تمام علامات کے مجموعہ کے مطابق اچھی طرح جانچ لینا مکمل شفا کی

 ضمانت ہو گا۔

1۔ زرد بخار۔(ہے فیور)۔ امبروشیا آرٹیمیشیا۔ 200 سے 1m

2۔ گندم سے الرجی۔سورانیم۔200 سے 1m cm

3۔ چینی یا گڑھ سے۔سیکہارم۔30 سے 200

4۔دودھ سے الرجی۔آرٹیکا یورینس۔ Q سے 200

5۔ انڈے سے الرجی۔فیرم میٹ۔30 سے 200

6۔خیزاب سے الرجی۔سلفر 200 سے 1m

7۔ اینٹی بائیٹک ادویات سے۔ سلفر۔200 سے 1m.

8۔۔ الرجی کا پھیپھڑوں پر اثر۔ارجینٹم نائیٹیرکم۔   30۔ سے 200

9۔   دھول اور گرد سے الرجی۔ڈسٹ 200

10۔ الرجی سے دمہ۔ ٹیوبرکولینیم cm  ایک ڈوز دے کر 3 دن انتظار کری۔پھر۔ آرسینکم البم 200 صبح کو۔ ایپیکاک 30 دوپہر۔ اینٹی مونیم ٹارٹ۔ 30 رات کو۔ ایک ماہ بعد۔پوٹنسی پڑھا دیں۔ اور اسی طرح۔ ڈوز کی پاورر اور ٹائیم بڑھا دیں۔

11۔ الرجی سے  دھپڑ پڑیں۔ ارٹیکا Q.

ڈرگ الرجی؛۔  ادویاتی الر جی ۔سلفرر 200 سے 1m

انجیکشن اور ویکسین کے لیئے۔ تھجا۔ 200 سے 1m

دوسری ادویات کی الرجی۔نکس۔کاربوویجی۔اور سلفر۔ بہترین ثابت ہوتی ہیں۔

پولن الرجی۔

اس کو بھی طلبہ کی سہولت کے لیے دو حصوں میں تقسیم کروں گا۔

 نمبر ا۔ موسمی یا سیزنل۔جیسے فروری سے مارچ کے مہینے میں پھول اور گھاس وغیرہ۔

نمبر 2۔ دائمی یا پیرینل۔ اسمیں ہے فیور وغیرہ۔

پولن الرجی۔ ایلم سیپا۔ آرسینیکم آئیوڈیٹم۔30۔ارنڈو۔200۔(ہے فیور)۔ سینگونیریا۔ 30۔200  پھولوں سے۔خوشبو سے۔ٹیوبرکولینیم 200 سے 1m.کم سے کم دو سال تک۔سردی سے الرجی۔ سورانیم 200۔ سباڈیلا۔30۔دمہ۔بخار۔( سلفر 30سے200 ۔انڈوں۔مکھن۔جانورں کی چربی ۔مچھلی سے الرجی اور بخار کاہی) (سٹیفی سیگریا۔ زکام چھینکوں سے جلن ناک میں۔) (سیپیا.30سے 200۔صبح بستر سے چھینکیں۔)(سٹکٹا۔برانکائیٹس)(کاربوویج گلا)(نیفتھالیں 30۔3x۔سرفی زکام بخار۔چھینکیں۔اشوب چشم)

پولن 200 ۔ہر چار دن بعد انٹرکرنٹ کے طور پر۔

الرجی کا علاج انسانی عضو کے حساب سے

آنکھوں میں الرجی۔

(آرسینکم ایلبم۔200۔دانے۔جلن۔بیچینی۔ کڑوا جلندار اخراج)(ایلم سیپا۔جلن۔درد۔اخراج پھکا پانی)(آرجینٹم نائٹ۔۔200 ۔پیپ سوزش ککرے)(پلسٹیلا۔30 سوجن۔پیلا مواد)(ڈلکامارا۔200 سرد موسم میں گاڑھا زرد مواد)(سلیشیا۔آنسو کی نالی کی سوجن۔پانی۔روشنی سے نفرت۔)(کلکیریا سلف۔سوجن زرد پیپ۔)(یوفریزیا۔زکام کے ساتھ سیلان)(مرکسال۔جلن سوجن۔سیلان)

جلد کی الرجی۔

مزیریم۔آرسینکم۔ایکونائٹ۔آرٹیکا

ڈلکامارا۔رسٹاکس۔نکس۔پلسٹیلا۔ارٹیکا یورینس۔ایپس۔ہیپر سلف۔نیٹرم میور۔(خارش۔ایکونایٹ۔ایتھوزا۔ایلمینا۔بووسٹا۔رومیکس۔سلفر آئیوڈائڈ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں